Connect with us

Subscribe

Travel

ملتان کے 10 قابل دید مقامات

شہر اولیاء کے نام سے معروف  پاکستان کے صوبہ پنجاب کا یہ شہر ملتان اپنے اندر مزارات ، قدیم دروازے ، تجارتی مراکز ،باغات و پارک کی رنگینیاں سمیٹے ہوئے ہے ۔ اس کا شمار دنیا کے قدیم ترین شہروں میں ہوتا ہے اور آبادی کے لحاظ سے یہ پاکستان کا پانچواں بڑا شہر ہے۔ آم کی پیداوار اور مشہور سوغات سوہن حلوہ کی وجہ سے معروف اس شہر کی سیر کا ارادہ رکھنے والوں کے لیے 10 قابل دید مقامات کا مختصرا تعارف حاضر خدمت ہے ۔

   نگارخانہ

فن کے قدردان اور تاریخ میں دلچسپی رکھنے والوں کے لئے یہ بہترین جگہ قاسم باغ میں واقع ہے، نگار خانہ ملتان کے مقامی لوگوں اور باہر سے آئے ہوئے سیاحوں کی توجہ کا مرکز رہتا ہے ۔ رنگارنگ آرٹ کے نمونے ، نقاشی ، لکڑی اور گلاس کے آرٹ پیس ، ہاتھ سے بنی جیولری ، جانوروں کی جلد سے بنے آرٹ کے نمونے اور اس کے علاوہ بھی آنکھوں کو بھا جانے والی بے شمار اشیاء اس نگار خانہ کی زینت بنی ہوئی ہیں ۔

مقبرہ شاہ رکن عالم

مشہور صوفی بزرگ حضرت شاہ رکن الدین عالم کا مزار 1324 میں تعمیر کیا گیا ۔ یہ مقبرہ تین اسلامی ثقافتوں ،عربی ، ایرانی اور ملتانی کا مجموعہ ہے ۔ سات صدیوں پرانا اور برصغیر کے اونچے ترین مقبروں میں شامل یہ تاریخی فن تعمیر کا شاہکار مقبرہ، اقوام متحدہ کے ادارے یونیسکو کی متوقع تاریخی ورثہ کی فہرست میں بھی شامل کیا گیا ہے۔

گھنٹا گھر / کلاک ٹاور ملتان

  برطانوی راج کے دوران  1884 میں یہ عمارت تعمیر کی گئی ۔  مینار کی صورت تعمیر، اس عمارت میں ایک گھڑیال نصب کیا گیا ہے جو کہ چاروں اطراف سے سنائی اور دکھائی دیتا ہے۔ اسی ثقافتی ورثہ کے نام پر ملتان کے ایک چوک کو گھنٹا گھر چوک کا نام دیا گیا جو کہ ملتان کے وسط میں واقع ہے۔

 چمن زار عسکری پارک

قدرتی حسن ،سبزہ اور پھولوں سے مہکتی یہ جگہ  شیر شاہ روڈ ملتان پر واقع ہے ۔بڑوں کے ساتھ ساتھ بچوں کے لئے بھی یہ ایک بہترین جگہ ہے، جہاں بچوں کے لیے چڑیا گھر ،جھولے اور بھوک مٹانے کا سامان دستیاب ہے ، وہیں بڑے جھیل میں کشتی کی سواری سے اپنے آپ کو لطف اندوز کرتے نظر آتے ہیں ۔

شاہی عیدگاہ مسجد

اٹھارھویں صدی عیسوی میں مغل بادشاہ محمد شاہ کے دور میں بنائی گئی یہ مسجد اسلامی اور مغلیہ طرز تعمیر کا شاہکار خانیوال روڈ ملتان پر واقع ہے۔اس مسجد کے سات گنبد ہیں جن میں سے درمیانی گنبد سب سے نمایاں اور اونچا ہے جو کہ دور سے ہی دعوت نظارہ دیتا ہے۔ملتان میں سب سے پہلے لاؤڈ اسپیکر پر اذان اسی مسجد میں دی گئی اور عید کے موقع پر سب سے بڑے اجتماع کا اعزاز بھی اسی مسجد کو حاصل ہے۔

حرم دروازہ

ملتان کے 6 تاریخی دروازوں میں شامل حرم دروازہ کی حال میں ہی تاریخی حیثیت بحال کی گئی ہے جو کہ وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ ماند پڑ گئی تھی۔ ایک زمانہ تھا کہ ملتان ایک بہت بڑے دریا کےکنارے آباد تھا اور  اس میں داخلے کے کئی دروازے موجود  تھے۔ حملہ آوروں نے شہر کے ساتھ ساتھ دروازوں کو بھی تباہ کر دیا ، پھر وقت گزرنے کے ساتھ شہر اور دروازوں کی تعمیر نو ہوتی رہی ، ان میں سے اب اپنی اصل شکل میں موجود ایک دروازہ “حرم دروازہ” ہے۔ کہا جاتا ہے کہ اس کانام حرم دروازہ اس لئے مشہور ہوا کہ جب بزرگ حضرت موسی پاک شہید(رح ) کا جسد خاکی ملتان میں اس دروازے سے لایا گیا تھا اور یہاں مستورات نے قیام کیا تو تب سے اسی مناسبت سے یہ حرم دروازہ کہلاتا ہے ۔ ملتان کے قلب میں واقع حرم گیٹ سے کئی راستے نکلتے ہیں۔

مزار بہاؤ الدین زکریا

اسلام کے عظیم مبلغ بہاؤ الدین زکریا سہروردی اس مزار میں سپرد خاک ہیں، آپ کی وفات 661ھ میں ہوئی۔ آپ کا مزار ہر خاص و عام کے لیے زیارت گاہ ہے۔ اینٹوں سے تیار شدہ اس مزار کو نیلی ٹائلوں سے سجایا گیا اور لکڑی کے بڑے بڑے داخلی دروازے بنائے گیے ہیں اس مزار کا طرز تعمیر قابل دید ہے ۔ یہ مزار قلعہ کہنہ قاسم باغ روڈ کو پر رونق بنائے ہوئے ہے۔

۔قلعہ کہنہ

“قلعہ ملتان” جو کہ “قلعہ کہنہ” کے نام سے بھی جانا جاتا ہے ملتان کے قلب میں “ملتان کرکٹ کلب ” کے قریب واقع ہے ۔ مشہور قاسم باغ اور اسٹیڈیم بھی اس قلعے کے اندر موجود ہیں ۔ یہ قلعہ اپنے منفرد فن تعمیر کے ساتھ ساتھ دفاعی میکانزم کی وجہ سے دیکھنے کے لائق ہے ۔ قلعے کی سب سے اونچی دیوار سیاحوں کو پورے ملتان کا نظارہ بھی فراہم کرتی ہے ۔

مزار شمس الدین سبزواری

ملتان کے بزرگ ترین اولیائے کرام میں شامل شمس الدین محمد سبزواری ایک مشہور صوفی مبلغ تھے ۔ شمس الدین سبزواری ملتانی کا مقبرہ ملتان قلعہ کے مقام سے نصف میل مشرق کی طرف واقع ہے ۔ شمس الدین سبزواری کی وفات 1278 میں ہوِئی اور اس مزار کو ان کے پوتے نے 1330 میں تعمیر کیا تھا۔ یہ مزار مربع  شکل کا ہے، جس کی اونچائی 30 فٹ (9.1 میٹر) ہے اور اس کا ایک عالیشان گول گنبد ہے۔ اس کو سبز رنگ والی ٹائلوں سے سجایا گیا ہے۔ ان کے مزار پہ لوگ دور دور سے آ کے حاضری دیتے ہیں۔

 دمدمہ

دمدمہ ملتان کا سب سے اونچا مقام ہے، آپ یہاں سے پورے شہر کا خوبصورت نظارہ دیکھ سکتے ہیں۔ یہ چوک گھنٹا گھر سے قریب واقع ہے ۔یہ ایک آرٹ گیلری ہے جس میں ملتان کے مختلف تاریخی واقعات پر مشتمل تصاویر موجود ہیں۔ جن میں آپ مختلف حملہ آوروں کی تصاویر جیسے سکندر اعظم ، محمد بن قاسم ، شیر شاہ سوری اور مختلف برطانوی حملہ آوروں کو دیکھ سکتے ہیں۔

Subscribe to Infotainment box updates

Comments
Advertisement

Top 10 Marvelous facts about Pakistan

Culture Heritage of Pakistan

Pakistan’s Handicrafts: Immensely Beautiful and eye-catching

Culture Heritage of Pakistan

Pakistan’s Top Ten Traditional Foods

Culture Heritage of Pakistan

شہر قائد (کراچی) کے 12 قابل دید مقامات

Travel

Advertisement
Connect
Subscribe to Infotainment box updates